پی ایس ایل فکسنگ اسکینڈل ،بورڈ کی مشکلات میں اضافہ ہو گیا

پی ایس ایل فکسنگ اسکینڈل ،بورڈ کی مشکلات میں اضافہ ہو گیا


لاہور (24نیوز)  پی ایس ایل فکسنگ کیس پی سی بی کے گلے کی ہڈی بن گیا ،10 ماہ گذرنے کے باوجود پی سی بی ٹھوس ثبوت سامنے لانے میں ناکام ہے ،شرجیل خان کے وکیل بورڈ خلاف لاہور ہائی کورٹ جانے کی تیاری مکمل کر لی ،کیس کی سماعت پر اب تک بورڈ کے لگ بھگ 50 لاکھ روپے خرچ ہو چکے۔

تفصیلات کے مطابق پی ایس ایل فکسنگ میں سکینڈل میں بورڈ کی جانب سے ٹھوس شواہد کی موجودگی کے دعوے ہوا ہوگئے ،دس ماہ گذرنے کے باوجود پی سی بی اینٹی کرپشن یونٹ کھلاڑیوں کے خلاف کوئی واضح ثبوت سامنے نہیں لاسکا, پی سی بی اینٹی کرپشن یونٹ کی جانب سے بکی قراردیئے جانے والے یوسف کے بکی ہونے کے بارے میں بھی بورڈ حکام ابھی تک لاعلم ہیں۔

پی سی بی حکام ابھی تک ٹربیونل کی سماعتوں پر 50 لاکھ روپے سے زائد کی رقم اینٹی کرپشن ٹربیونل کو ادا کرچکا ہے ،مصدقہ ذرائع سے معلوم ہوا ہے کہ ٹربیونل اراکین کو 25 ہزار روپے یومیہ ادا کئے جارہے ہیں۔

ابھی تک شاہ زیب حسن اور ناصر جمشید کے خلاف کوئی فیصلہ نہیں ہو سکا،شرجیل خان کے وکیل آئندہ ہفتے پی سی بی کے خلاف لاہور ہائی کورٹ میں اپیل دائرکریں گے جس کے دفاع کے لئے بورڈ حکام وکلا کو لاکھوں روپے معاوضہ اداکریں گے۔